تازہ ترین
Home / سپورٹس

سپورٹس

ہیڈ کوچ آرتھر نے ون ڈے میں عمر رسیدہ کھلاڑیوں کیلیے خطرے کی گھنٹی بجادی

591903-mickey-1472243526-525-640x480

لندن: ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے ون ڈے کرکٹ میں عمر رسیدہ کھلاڑیوں کیلیے خطرے کی گھنٹی بجادی۔مکی آرتھر کا کہنا ہے کہ پلیئرز کو بتا دیا کہ کسی کی بھی ٹیم میں جگہ پکی نہیں، اگر کوئی 30 سال سے زیادہ عمر کا ہے تو اس کو زیادہ محنت اور کارکردگی دکھانے کی ضرورت ہوگی، دوسری صورت میں نوجوان ان کی جگہ لینے کیلیے تیار ہیں، سب کو اندازہ ہے کہ پرفارم کرنا ورنہ پیچھے ہٹ جانا ہوگا۔لوئر آرڈر میں تیزی سے رنز بنانے کی صلاحیت رکھنے والے بیٹسمینوں کی کمی کے سوال پر انھوں نے کہا کہ اس معاملے میں سوچ بچار اور کام کرنے کی سخت ضرورت ہے، اس پوزیشن پر بیٹنگ کرنے والا کھلاڑی بھی تلاش کرکے صلاحیتوں کو نکھارنا ہوگا، فی الحال ہمیں دستیاب 15 کرکٹرز میں سے ہی کمبی نیشن اور حکمت عملی تشکیل دینا ہے، البتہ چند روز بعد اس حوالے سے کام ضرور کروں گا۔

ڈائریکٹرآپریشنز؛ اعلیٰ آفیشلزکے من پسند امیدوار میدان میں آگئے

591901-pcb-1472243421-485-640x480

کراچی: پی سی بی ڈائریکٹر کرکٹ آپریشنز کا تقرر کیے بغیر ہی پوسٹ ختم کرنے کا سوچنے لگا، کئی اعلیٰ آفیشلز نے من پسند امیدواروں کو میدان میں اتار دیا، ایسے میں بہتر یہی سمجھا گیا کہ کسی کو بھی ذمہ داری نہ سونپی جائے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کی بعض اعلیٰ شخصیات نے اپنے منظور نظر برطرف شدہ سابق چیف سلیکٹر ہارون رشیدکو بورڈ میں واپس لانے کیلیے ڈائریکٹر کرکٹ آپریشنز کی پوسٹ تخلیق کی، اس ضمن میں اشتہار بھی انہی کو ذہن میں رکھ کر تیار کیا گیا، ہارون رشید کو ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں شکست کے بعد انکوائری رپورٹ کے نتیجے میں برطرف کیا گیا تھا، بورڈ میں موجود دوسرے گروپ نے ایسے میں شطرنج کی اس بساط پر مہرہ بنا کر اقبال قاسم کو پیش کر دیا،یوں ہارون رشید کیلیے میدان صاف نہ رہا کیونکہ سابق اسپنر اپنے بے داغ ماضی کی وجہ سے میرٹ پر تو فیورٹ امیدوار تھے، صورتحال مزید دلچسپ اس وقت ہوئی جب غیرفعال ذاکر خان بھی میدان میں کود پڑے اور درخواست دے دی۔ان کے بھی بعض ”چاہنے والے“ اعلیٰ نشستوں پر براجمان ہیں، یوں معاملہ گمبھیر ہو گیا،محاذ آرائی سے بچنے کیلیے بورڈ نے فیصلہ کیا ہے کہ فی الحال کسی کو بھی ڈائریکٹر کرکٹ آپریشنز نہ بنایا جائے اور معاملات پہلے کی طرح چلنے دیے جائیں۔ یاد رہے کہ ذاکرخان کو فارغ ہوئے طویل عرصہ گذر چکا مگر بدستور ڈائریکٹر والی ہی تنخواہ سوا چار لاکھ روپے ماہانہ،گاڑی، پیٹرول، موبائل اور میڈیکل سمیت تمام سہولیات دی جا رہی ہیں، انھیں جونیئر ٹیم کا منیجر بنایا گیا تھا مگر شکایات آنے پر ذمہ داری سے سبکدوش کر دیا گیا، اس معاملے کی انکوائری رپورٹ بھی کافی عرصے سے چیئرمین کی ٹیبل پر رکھی گردآلود ہو چکی ہوگی مگر کوئی ایکشن نہیں لیا گیا۔

مصباح کو پانچواں ٹیسٹ نہ ہونے کا غم ستانے لگا

591905-MisbahWeb-1472267897-388-640x480

لاہور: مصباح الحق کو انگلینڈ کیخلاف پانچواں ٹیسٹ نہ ہونے کا غم ستانے لگا، ان کا کہنا ہے کہ اگر ایک اور میچ ہوجاتا تو سیریز بھی جیت لیتے،انگلش کپتان الیسٹر کک سے کہا کہ میزبان ٹیم کو کسی بھی میدان پر شکست دے سکتے ہیں۔تفصیلات کے مطابق مصباح الحق نےآسٹریلوی ویب سائٹ کیلیے کالم میں تحریر کیاکہ ٹیسٹ سیریز پانچ میچز پر مشتمل ہوتی تو مزید اچھی کرکٹ دیکھنے کو ملتی، انگلش کپتان الیسٹر کک سے ازراہ مذاق کہاکہ فیصلہ کن میچ بھی کھیل لیتے ہیں، انھوں نے کہا کہ آپ یہ میچ لارڈز یا اوول میں کھیلنا چاہیں گے، اس پر میرا جواب تھا کہ ہم میزبان ٹیم کو اولڈ ٹریفورڈ اور ایجبسٹن سمیت کسی بھی میدان پر شکست دے سکتے ہیں، مصباح الحق نے کہا کہ اوول ٹیسٹ سے قبل یوم آزادی پر قوم کو فتح کا تحفہ دینے کیلیے کھلاڑیوں کا جوش بڑھایا،نمبر ون پوزیشن کا ہدف بھی تحریک دلانے کا ذریعہ بنا،انھوں نے کہا کہ گرین کیپس نے دباﺅ میں بہترین کارکردگی پیش کرنے کا ہنر سیکھ لیا جس کی وجہ سے ہم کئی بڑی ٹیموں کو زیر کرنے میں کامیاب ہوئے۔البتہ یواے ای میں 2012میں اس وقت سرفہرست انگلینڈ کو کلین سویپ سب سے یادگار فتح تھی،اس کامیابی سے کھلاڑیوں کا اپنی صلاحیتوں پر اعتماد بڑھ گیا،کئی بار میچز یا سیریز میں دباﺅ میں آنے کے باوجود کم بیک کیا، ٹیم کی فائٹنگ اسپرٹ بے مثال ہے،اس کا مظاہرہ انگلینڈ کیخلاف سیریز میں بھی دیکھنے میں آیا، انھوں نے بتایا کہ 6 سال قبل اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل سامنے آنے پر چیئرمین پی سی بی اعجاز بٹ نے ایک کلرک کے کمرے میں خفیہ ملاقات کرتے ہوئے اچانک کپتان بنانے کا فیصلہ کیا، قیادت ملنے کی طرح نمبر ون پوزیشن کا حصول بھی ڈرامائی محسوس ہوتا ہے، یہ ایک بڑی کامیابی اور ٹیم اس اعزاز پر فخر محسوس کرتی ہے۔

پاکستان کھیلوں کیلیے پ±ر امن ملک ہے، عامر خان

591911-BoxerAamirKhanPhotoFile-1472244469-884-640x480
لاہور: عالمی شہرت یافتہ پاکستانی نڑاد برطانوی باکسر عامر خان نے کہاکہ پاکستان کھیلوں کے لیے پرامن ملک ہے، یہاں باکسنگ کا بہت ٹیلنٹ موجود بس اسے نکھارنے کی ضرورت ہے، پاکستان کو باکسنگ میں بلندیوں پر لے جانا چاہتا ہوں۔فاسٹ بولر تھا لیکن پروفیشن اور جنون باکسنگ سے ہی وابستہ ہے،کوئی بھی ٹائٹل جیتنے سے زیادہ مشکل اس کا دفاع کرنا ہوتا ہے، میری اگلی فائٹ آئندہ سال جنوری یا فروری میں ہوگی۔لاہور داتا دربار میں حاضری کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے عامر خان نے کہا کہ میرا تعلق راولپنڈی سے ہے، ہم چھوٹی عمر سے گرمیوں کی چھٹیاں پاکستان میں گزارتے تھے اور اس وقت سے آمد کا سلسلہ جاری ہے، مداحوں سے کبھی نہیں گھبرایا، وہ جب بھی سیلفیزکی فرمائش کرتے ہیں تو میں انکار نہیں کرتا، باکسنگ کا آغاز 8 سال کی عمر میں کردیا تھا، پاکستان سے تعلق ہونے کی وجہ سے کرکٹ سے لگاﺅ ضرور ہے، میں فاسٹ بولنگ کرتا تھا لیکن پروفیشن اور جنون باکسنگ سے ہی وابستہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ باکسنگ میں سخت لیکن زندگی میں ذمہ دار شہری ہوں، پاکستان میں باکسنگ کا بہت زیادہ ٹیلنٹ ہے صرف اس کو نکھارنے کی ضرورت ہے۔عامر خان نے بتایا کہ میری اہلیہ مجھے اردو سکھاتی ہیں، اردو اتنی زیادہ بولنی نہیں آتی لیکن کوشش ضرور کرتا ہوں، اپنی ذاتی زندگی کے متعلق سوالات کے جواب دیتے ہوئے بتایا کہ فریال سے نیویارک میں ڈنر پر ملاقات ہوئی اور میں نے ہی شادی کے لیے پرپوز کیا تھا، فریال کو باکسنگ کے متعلق کچھ خاص نہیں پتہ، جب میں نے شادی کے لیے پرپوز کیا تو اس نے بات والدین پر ڈال دی تھی جس کے بعد میں نے اپنے اہل خانہ کو ان کے گھر بھیجا اور شادی انجام پائی، فریال بہت کہتی ہیں کہ اب باکسنگ کو خیرباد کہہ دو لیکن میرا ابھی بہت کیریئر باقی ہے، میں صرف 29 سال کا ہوں، میرا خواب تھا کہ ورلڈ چمپئن بنوں جس کے لیے میں نے جرمنی کے 35 سالہ ورلڈ چمپئن کو چیلنج کیا اور کامیاب رہا، عامر خان نے بتایا کہ ایک فائٹ کے دوران میں پہلے ہی راو¿نڈ سے باہر ہوگیا تھا، اپنی اس شکست سے مجھے بہت کچھ سیکھنے کو ملا اور وہ فائٹ مجھے ابھی تک یاد ہے جس کو میں کبھی نہیں بھول سکتا۔برطانوی باکسر نے کہا کہ17سال کی عمر سے اولمپکس میں شرکت کر کے کامیابیوں کا سلسلہ شروع کیا۔، جب باکسنگ شروع کی تو دن میں 4 سے 5 گھنٹے سخت ٹریننگ کرتا تھا، پاکستان میں اسلام آباد کے جناح اسٹیڈیم میں باکسنگ کی ہے، کوئی بھی ٹائٹل جیتنے سے زیادہ مشکل ٹائٹل کا دفاع کرنا ہوتا ہے کیونکہ آپ ذہن میں سوار کر لیتے ہیں کہ اس فائٹ کو کسی صورت نہیں ہارنا ہے۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان اور انگلینڈ سے قطع نظر پوری دنیا کے مسلمان مجھے سپورٹ کرتے ہیں، انھوں نے بتایا کہ ابھی حالیہ دنوں میں تھر وغیرہ کا دورہ کر کے آیا ہوں جہاں میں نے دیکھا کہ لوگوں کے پاس کھانے کو کچھ نہیں جسے دیکھ کر بہت افسوس ہوا، ایسے ہی لوگوں کی مدد کے لیے میں عامر خان ٹرسٹ اور فاﺅنڈیشن کا قیام عمل میں لایاہوں، جب بھی قدرتی آفات سے تباہی ہوئی ہم نے متاثرین کی مدد کی، خیرات اور امداد دینے کے متعلق انھوں نے بتایا کہ پاکستانی اس معاملے میں اپنی مثال آپ ہیں، لوگ مجھ پر اعتماد کرتے ہیں اور ہماری فاﺅنڈیشن میں رقم اور عطیات جمع کراتے ہیں، میرے پاس اللہ کا دیا بہت کچھ ہے لوگوں کی طرف سے عطیہ کی گئی ایک ایک پائی اسی مقصد کے لیے خرچ کی جاتی ہے جس کیلیے حاصل کی جاتی ہے۔عامر خان نے بتایا کہ میرا یقین ہے کہ آپ جتنا زیادہ اللہ کی راہ میں خرچ کریں گے وہ اتنا زیادہ آپ کو نوازے گا، فیملی کے ساتھ زیادہ وقت گزارنے کی کوشش کرتا ہوں کیونکہ اب میں ایک والد بھی ہوں اور میری بہت پیاری بیٹی ہے، میری اگلی فائٹ آئندہ سال جنوری یا فروری میں ہوگی۔

دوسرے ایک روزہ میچ میں پاکستان کی بیٹنگ، 2 رنز پر 3 کھلاڑی آو¿ٹ

591508-cric-1472209800-617-640x480

ارڈز: پانچ ایک روزہ میچوں کی سیریز کے دوسرے میچ میں پاکستان کی انگلینڈ کے خلاف بیٹنگ جاری ہے اور قومی ٹیم کے ابتدائی 3 بلے باز 2 رنز پر پویلین لوٹ گئے۔لندن کے لارڈز گراو¿نڈ میں کھیلے جارہے میچ میں پاکستان کی انگلینڈ کے خلاف بیٹنگ جاری ہے اور قومی ٹیم نے 3 وکٹوں کے نقصان پر 12 رنز بنا لئے ہیں۔ پاکستان کی جانب سے سمیع اسلم کے ساتھ شرجیل خان نے اننگز کا آغاز کیا لیکن سمیع اسلم دوسرے ہی اوور میں ایک رن بنا کر آو¿ٹ ہو گئے، شرجیل خان بھی تیسرے اوور میں شرجیل خان اپنا کھاتا کھولے بغیر ہی بولڈ ہو گئے جب کہ کپتان اظہر علی بھی صفر پر ہی پویلین لوٹ گئے۔قبل ازیں پاکستان کے کپتان اظہر علی نے ٹاس جیت کر انگلینڈ کے خلاف پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا ہے۔ اس موقع پر اظہر علی کا کہنا تھا کہ وکٹ بیٹنگ کے لئے سازگار ہے اور گزشتہ میچ میں ہونے والی غلطیوں پر قابو پا کر سیریز برابر کرنے کی پوری کوشش کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ قومی ٹیم میں تین تبدیلیاں کی گئی ہیں، محمد حفیظ، محمد نواز اور عمر گل کی جگہ سمیع اسلم، یاسر شاہ اور حسن علی کو پلیئنگ اسکواڈ میں شامل کیا گیا ہے۔واضح رہے کہ پہلے ایک روزہ میچ میں انگلینڈ نے پاکستان کو ڈک ورتھ لوئس سسٹم کے تحت 44 رنز سے شکست دے دی تھی۔ انگلینڈ کو 5 ایک روزہ میچوں کی سیریز میں ایک صفر کی برتری حاصل ہے تاہم لارڈز میں پاکستان کو مجموعی طور پر برتری حاصل ہے، اور اب تک کھیلے گئے 7 میچز میں سے پاکستان نے 4 میں کامیابی حاصل کی ہے۔

2016 کی کرکٹ 1990کا انداز؛ کپتان کے ماتھے پر پریشانی کی شکنیں نموردار

591155-AzharAliWeb-1472182674-178-640x480

ساو¿تھمپٹن: پاکستان کرکٹ ٹیم 2016 کی ون ڈے کرکٹ بھی 1990 کے انداز میں کھیل رہی ہے، شاید اسی لیے رینکنگ میں نویں درجے پر پہنچ گئی، کوچ مکیآرتھر نے بھی گذشتہ دنوں جدید طریقے سے نہ کھیلنے پر تشویش ظاہر کی تھی۔تفصیلات کے مطابق پاکستان نے انگلینڈ کیخلاف ٹیسٹ سیریز میں حیران کن کھیل پیش کیا اور کم بیک کرتے ہوئے مقابلہ2-2سے برابر کرکے تاریخ میں پہلی بار عالمی رینکنگ میں نمبرون کا تاج بھی سرپر سجا لیا، مگر فارمیٹ تبدیل ہوتے ہی مہمان ٹیم کا مزاج بھی یکسر مختلف نظر آیا،کھلاڑیوں کے جدید ون ڈے کرکٹ سے ہمآہنگ نہ ہونے پر کپتان اظہر علی بھی تشویش میں مبتلا نظرآتے ہیں،میچ کے بعد میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ سپورٹنگ پچ پر ہمارا ٹوٹل توقعات کے مطابق نہ تھا، یہاں 290رنز بنائے جا سکتے تھے لیکن بیٹسمینوں نے بہت زیادہ ڈاٹ بالز کھیلیں، اس میں کوئی شک نہیں کہ انگلش بولرز نے اچھی بولنگ کی لیکن جدید ون ڈے کرکٹ میں رنز بنانے کے طریقے نکالنے پڑتے ہیں،ٹاپ آرڈر کو اچھا آغازدینا ہوتا ہے۔بعد ازاں مڈل آرڈر بیٹنگ رنز کی رفتار کو مزید آگے بڑھاتی ہے، ہمارا یہ ردھم ٹوٹ گیا، آخری اوورز میں بھی ہم مطلوبہ رن ریٹ برقرار نہیں رکھ پائے، میرے خیال میں گرین شرٹس نے 30رنز کم بنائے۔ انھوں نے کہا کہ انگلش اننگز کی ابتدا میں بولرز نے بھی اچھی کارکردگی نہیں دکھائی، کثرت سے شارٹ گیندوں کی وجہ سے فیلڈنگ سیٹ کرنے میں بھی مشکلات پیش آئیں، اس سے ہمیشہ جارحانہ انداز میں بیٹنگ کرنے والی میزبان ٹاپآرڈر کو کھل کر رنز بنانے کا موقع ملا، اگر ہمارے بولرز شروع میں اٹیک کرنے میں کامیاب ہوجاتے تو شاید بہتر پلاننگ کا موقع مل جاتا۔اظہر علی نے تسلیم کیا کہ فیلڈنگ میں خامیوں کی وجہ سے حریف کو دباﺅ میں نہ لاسکے۔رنز روکنے اور کیچز لینے سے ہمیشہ بیٹنگ سائیڈ کیلیے پریشانی پیدا ہوتی ہے لیکن ہم نے جو فیلڈنگ کی اس سے کہیں زیادہ بہتر کارکردگی دکھانے کی صلاحیت رکھتے ہیں، اگلے میچز میں ان مسائل پر قابو پاتے ہوئے کوشش کرینگے کہ ہر کھلاڑی پلان کے مطابق کھیلتے ہوئے ٹیم کیلیے اپنا کردار ادا کرے۔ ایک سوال پر کپتان نے کہا کہ عماد وسیم کو اننگز کی ابتدا میں بولنگ کا موقع دینا حکمت عملی کا نتیجہ تھا لیکن ہوا کا رخ دیکھتے ہوئے محمد عامر کوآزمانے کا فیصلہ کیا،غلطیوں کا بغور جائزہ لیتے ہوئے اگلے میچ میں بہتر کھیل پیش کرنے کی کوشش کرینگے۔ یاد رہے کہ بدھ کو کھیلے گئے پہلے ڈے نائٹ ون ڈے میں انگلینڈ نے پاکستان کوڈک ورتھ لوئس سسٹم کے تحت 44 رنز سے ہرایا تھا، گرین شرٹس نے261 رنز کا ہدف دیا، جواب میں میزبان ٹیم نے 3 وکٹ پر34.3 اوورز میں 193 رنزبنائے تھے کہ بارش کے باعث میچ روک دیا گیا۔انگلینڈ نے اپنی اننگز کا دوبارہ آغاز کیا تو میچ کو 48 اوورز تک محدود کرکے ہدف 252 کردیا گیا، میچ جیتنے کیلیے 14 اوورزمیں59رنز درکار تھے کہ مسلسل بارش کے باعث کھیل ایک بار پھر روکنا پڑا جس کے بعد ڈی ایل میتھڈ کے تحت میزبان ٹیم کو 44 رنز سے فاتح قرار دیدیا گیا، روئے65 اور روٹ61رنز کی اننگز کھیلنے میں کامیاب ہوئے، عمر گل اور نواز نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔ دونوں ٹیمیں اب ہفتے کو لارڈز میں دوسرا ون ڈے انٹرنیشنل کھیلیں گی۔

پاکستان صحرائے عرب میں کالی آندھی کی میزبانی کیلیے تیار

591157-UAEStadium-1472182439-406-640x480

لاہور: پاکستان صحرائے عرب میں کالی آندھی کی میزبانی کیلیے تیار ہے،سیریز کا باضابطہ شیڈول جاری کردیا گیا، ستمبر سے نومبرتک ہونے والی سیریز تینوں فارمیٹ کے 3،3میچز پر مشتمل ہوگی، دبئی میں تاریخی نائٹ ٹیسٹ کی تیاری کیلیے ویسٹ انڈین ٹیم ای سی بی الیون سے آئی سی سی اکیڈمی کی مصنوعی روشنیوں میں 2 روزہ ٹور میچ 3اور4اکتوبر کو کھیلے گی.
تفصیلات کے مطابق سری لنکن ٹیم کی بس پر لاہور میں دہشت گردوں کا حملہ ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کو ختم کر گیا،اس کے بعد سے میدان مقابلوںکو ترس رہے ہیں، پی سی بی بھاری بھرکم اخراجات کے باوجود اپنی ہوم سیریز یواے ای میں کرانے پر مجبور ہے، مالی خسارے کو کم کرنے کیلیے ویسٹ انڈیز کی میزبانی سری لنکا میں کرنے کی تجویز بھی سامنے ا?ئی تھی لیکن وہاں موسم کی مداخلت کو پیش نظر رکھتے ہوئے بالآخر کیریبیئنز کا امارات میں ہی استقبال کرنے کا فیصلہ کیا گیا، ستمبرسے نومبر تک ہونے والی سیریز 3ٹی ٹوئنٹی، اتنے ہی ون ڈے انٹرنیشنل اور 3 ٹیسٹ پر مشتمل ہوگی، پی سی بی کی جانب سے مقابلوں کا باقاعدہ شیڈول جاری کردیا گیا ہے۔
ویسٹ انڈین ٹیم ای سی بی الیون کے ساتھ مختصر فارمیٹ کا ایک ٹور میچ 20ستمبر کو دبئی کے ا?ئی سی سی اکیڈمی گراﺅنڈ پرکھیلے گی، ابتدائی دونوں ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل 23اور24ستمبر کو دبئی میں ہونگے،اس طرز کے تیسرے اور آخری میچ کا 27 ستمبرکو ابوظبی میزبان ہوگا۔ ون ڈے سیریز کے ابتدائی دونوں مقابلے 30ستمبر اور 2 اکتوبر کو شارجہ میں شیڈول کیے گئے ہیں، اس کے بعد مہمان ٹیم 2روزہ ٹور میچ میں 3اور 4اکتوبر کو ای سی بی الیون پر آئی سی سی اکیڈمی میں ہنرآزمائے گی، تیسرے ایک روزہ انٹرنیشنل میچ میں دونوں ٹیمیں 5 تاریخ کو ابوظبی میں مقابل ہونگی، ویسٹ انڈین ٹیم شارجہ اسٹیڈیم کی مصنوعی روشنیوں میں پی سی بی پیٹرنز الیون کیخلاف سہ روزہ ٹور میچ 7سے 9اکتوبر تک کھیلے گی۔
اس مقابلے میں مہمان ٹیم کو نئی تاریخ رقم کرنے والے نائٹ ٹیسٹ کی تیاری کا موقع ملے گا جو 13 سے17اکتوبر تک دبئی میں رکھاگیا ہے، ابوظبی21 سے25اکتوبر تک دوسرے میچ کا میزبان ہوگا، تیسرا اور آخری ٹیسٹ 30 اکتوبر سے 3نومبر تک شارجہ میں ہوگا۔ یاد رہے کہ دبئی میں ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کا دوسرا ڈے نائٹ میچ ہوگا، اولین مقابلہ گذشتہ سال آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے درمیان ایڈیلیڈ میں ہوا تھا، آئی سی سی کی طرف بھرپور حوصلہ افزائی کیے جانے پر پی سی بی نے ویسٹ انڈیز کو مصنوعی روشنیوں میں طویل فارمیٹ کا میچ کھیلنے کی تجویز دی تھی۔
جس نے اس نوعیت کے مقابلوں کی پریکٹس نہ ہونے کے سبب ابتدا میں توقف کا اظہار کیا، تاہم پاکستان کی جانب سے ڈے اینڈ نائٹ ٹور میچ شیڈول کیے جانے پر رضامندی ظاہر کردی۔ پاکستانی کرکٹ ٹیم کو رواں برس کے آخر میں شیڈول دورئہ آسٹریلیا میں بھی برسبین میں ایک ڈے نائٹ ٹیسٹ میچ کھیلنا ہے،سیریز کے دوسرے مقابلے میں 15دسمبر کو میزبان کینگروز کا مصنوعی روشنیوں میں سامنا کرنا ہوگا۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان دوسرا ون ڈے کل کھیلا جائے گا

591508-cric-1472209800-848-640x480

 لارڈز: پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان 5 ایک روزہ میچز کی سیریز کا دوسرا میچ کل کھیلا جائے گا۔انگلینڈ کے تاریخی کرکٹ گراو¿نڈ لارڈز میں دونوں ٹیمیں پاکستانی وقت کے مطابق سہ پہر ڈھائی بجے ٹکرائیں گی۔ پہلے میچ میں ڈک ورتھ لوئس قانون کے تحت قومی کرکٹ ٹیم کو ناکامی کا سامنا کرنا پڑا تاہم گرین شرٹس کے کپتان اظہر علی کھلاڑیوں کی ناقص فیلڈنگ سے شدید پریشان ہیں اور دوسرے میچ کے لئے بیٹنگ اور بولنگ کے علاوہ کھلاڑیوں کو فیلڈنگ کے شعبے میں بھی خصوصی توجہ دینے پر زور دے رہے ہیں جب کہ کپتان لارڈز میں کامیابی کے بعد سیریز 1-1 سے برابر کرنے کے خواہاں ہیں۔لارڈز میں کھیلے جانے والے میچ کے لئے قومی ٹیم میں ایک تبدیلی کئے جانے کا امکان ہے اور کرکٹ ماہرین لیگ اسپنر یاسر شاہ کو موقع دینے کے حق میں ہیں تاہم ٹیم میں شامل محمد نواز اور عماد وسیم کی جانب سے بھی قابل اطمینان کارکردگی پیش کی گئی۔ دوسری جانب انگلش ٹیم میں کسی تبدیلی کا امکان نہیں اور انگلش کپتان این مورگن لارڈز ٹیسٹ میں بھی پہلے میچ کی فاتح ٹیم کو ہی کھلانے کے حق میں ہیں۔پاکستانی 15 رکنی اسکواڈ میں کپتان اظہرعلی، شرجیل خان، محمد حفیظ،شعیب ملک، سرفراز احمد، بابراعظم، سمیع اسلم، محمد رضوان، عماد وسیم، محمد نواز، محمد عامر، عمر گل، وہاب ریاض اور یاسر شاہ شامل ہیں جب کہ انگلش ٹیم کی قیادت این مورگن کریں گے جنہیں اسکواڈ میں معین علی، جونی بریسٹو، جوز بٹلر، جیک بیل، لیام ڈاو¿سن، الیکس ہیلز، کرس جورڈن، لیام پلنکٹ، جوئے روٹ، جیسن رائے، عادل رشید، ڈیوڈ ولے، کرس ووکس، بین اسٹوک اور مارک ووڈ کی خدمات حاصل ہیں۔

علومی کریم نے بھارتی سورما کو شکست دیکر اپنی فتح مظلوم کشمیریوں کے نام کردی

571398-allomi-1469975054-515-640x480

منیلا: پاکستانی کھلاڑی علومی کریم شاہین نے ورلڈ سیریز آف فائٹنگ گلوبل چیمپئین شپ میں بھارتی سورما کو ہرا کر اپنی جیت کشمیری عوام کے نام کردی۔دنیا کے تیسرے بڑے مکس مارشل آرٹس فائٹنگ ایونٹ ورلڈ سیریز آف فائٹنگ گلوبل چیمپئین شپ کا سالانہ میلہ فلپائن میں سجا۔ جس میں پاکستان کے علومی کریم شاہین نے یدوندر سنگھ کو شکست دے دی جو ایونٹ میں مسلسل 4 برسوں سے ناقابل شکست تھا۔ دوسری جانب علومی کے ساتھ دوسرے پاکستانی فائٹر احمد مجتبیٰ نے بھی فلپائن کے نیل لارانوو کو شکست دے دی ہے۔جیو پاکستان سے خصوصی بات کرتے ہوئے علومی کریم شاہین نےکہا کہ ایونٹ میں کامیابی اللہ کی مہربانی یہ سب ان کے والدین کی دعا کا نتیجہ ہے۔ ایونٹ میں شرکت اور پریکٹس کے دوران ان کی ٹیم کو مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی بربریت سے متعلق مسلسل خبریں مل رہی تھیں ، اس کے علاوہ ایونٹ میں ان کا مقابلہ بھی بھارتی سورما سے تھا ، جسے انہوں نے شکست دے دی۔25 سالہ علومی کریم شاہین کا تعلق گلگت بلتستان سے ہے اور وہ ملک کے سب سے بہترین مکس مارشل آرٹس فائٹر ہیں۔ ان کے بڑے بھائی احتشام کریم بھی سابق مکس مارشل آرٹس فائٹر ہیں اور اسلام آباد میں اپنا فائٹنگ کلب چلاتے ہیں، احتشام کریم نے علومی کی فتح پر انتہائی مسرت کا اظہار کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ علومی چیمئین شپ میں کامیابی کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔

کیریبیئن پریمیئر لیگ: شعیب ملک کی ٹیم بارباڈوس پلےآف سے آو¿ٹ

571751-ShoaibMalikWeb-1470022668-855-640x480

فلوریڈا: گیانا ایمیزون واریئرز نے 6 وکٹ سے شکست دیکر باربارڈوس ٹرائیڈینٹس کو ٹائٹل کی دوڑ سے باہر کردیا۔گذشتہ شب منعقدہ میچز میں گیانا ایمیزون واریئرز نے بارباڈوس ٹرائیڈینٹس کو 6 وکٹ سے شکست دیکر ٹائٹل کی دوڑ سے باہر کردیا، ناکام سائیڈ نے پہلے کھیل کر 6 وکٹ کے نقصان پر 158رنز جوڑے، کپتان کیرون پولارڈ47، اسٹیون ٹیلر37 اور شعیب ملک33 گیندوں پر 35رنز بنائے۔
احمد شہزاد 6رنز بنا سکے ،سہیل تنویرنے 2 کھلاڑیوں کو آﺅٹ کیا، واریئرز نے ہدف 19.3 اوورز میں 4 وکٹ کھوکر حاصل کرلیا، کرس لین 57 رنز بناکر میدان بدر ہوئے جبکہ جیسن محمد نے 57 کی ناقابل شکست اننگز کھیلی۔ دوسرے میچ میں سینٹ لوشیا زوکس نے جمیکا تلاواز کو 63رنز سے مات دیکر پلے آف میں رسائی حاصل کرلی۔سی پی ایل کا پہلا پلے آف بدھ 3 اگست کو ایمیزون اور تلاواز کے درمیان ہوگا، دوسرا پلے آف جمعرات 4 اگست کو زوکس اور ٹرائنباگو نائٹ رائیڈرز کے درمیان شیڈول ہے۔